Loading ...
Sorry, an error occurred while loading the content.

(Ramadhan) Today's Hadith Arabic/Urdu/English Shaban ul Muazzam 29, 1434 A.H

Expand Messages
  • Fasih Ur Rehman Khan
    حدثنا خالد بن مخلد حدثنا سليمان بن بلال قال حدثني أبو حازم عن سهل رضي الله عنه عن النبي
    Message 1 of 1 , Jul 8, 2013
    • 0 Attachment


      حدثنا خالد بن مخلد حدثنا سليمان بن بلال قال حدثني أبو حازم عن سهل رضي الله عنه عن النبي صلی الله عليه وسلم قال إن في الجنة بابا يقال له الريان يدخل منه الصائمون يوم القيامة لا يدخل منه أحد غيرهم يقال أين الصائمون فيقومون لا يدخل منه أحد غيرهم فإذا دخلوا أغلق فلم يدخل منه أحد

      صحیح بخاری:جلد اول:حدیث نمبر 1791    حدیث مرفوع  مکررات 7 متفق علیہ 3 بدون مکرر 
       خالد بن مخلد، سلیمان بن بلال، ابوحازم ، سہل نبی صلی اللہ علیہ وسلم سے روایت کرتے ہیں۔ آپ نے فرمایا کہ جنت میں ایک دروازہ ہے جس کو ریان کہتے ہیں قیامت کے دن اس دروازے سے روزے دار ہی داخل ہوں گے کوئی دوسرا داخل نہ ہوگا، کہا جائے گا کہ روزہ دار کہاں ہیں؟ وہ لوگ کھڑے ہوں گے اس دروازہ سے ان کے سوا کوئی داخل نہ ہو سکے گا، جب وہ داخل ہو جائیں گے تو وہ دروازہ بند ہو جائے گا اور اس میں کوئی داخل نہ ہوگا۔

      Narrated Sahl: 
      The Prophet said, "There is a gate in Paradise called Ar-Raiyan, and those who observe fasts will enter through it on the Day of Resurrection and none except them will enter through it. It will be said, 'Where are those who used to observe fasts?' They will get up, and none except them will enter through it. After their entry the gate will be closed and nobody will enter through it."
      Sahih Bukhari, Jild 1, Hadith 1791

      حدثنا أبو بکر بن أبي شيبة حدثنا خالد بن مخلد وهو القطواني عن سليمان بن بلال حدثني أبو حازم عن سهل بن سعد رضي الله عنه قال قال رسول الله صلی الله عليه وسلم إن في الجنة بابا يقال له الريان يدخل منه الصامون يوم القيامة لا يدخل معهم أحد غيرهم يقال أين الصامون فيدخلون منه فإذا دخل آخرهم أغلق فلم يدخل منه أحد

      صحیح مسلم:جلد دوم:حدیث نمبر 216    حدیث مرفوع  مکررات 7 متفق علیہ 3 بدون مکرر 
       ابوبکر بن ابی شیبہ، خالد بن مخلد، سلیمان بن بلال، ابوحازم ، حضرت سہل بن سعد رضی اللہ تعالیٰ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے ارشاد فرمایا جنت میں ایک دروازہ ہے جسے ریان کہا جاتا ہے اس دروازہ سے قیامت کے دن روزہ رکھنے والے ہی داخل ہوں گے ان کے علاوہ کوئی اور داخل نہیں ہوگا کہا جائے گا کہ روزہ رکھنے والے کہاں ہیں؟ پھر وہ اس دروازے سے داخل ہوں گے اور جب روزہ رکھنے والوں میں آخری داخل ہو جائے گا تو وہ دروازہ بند ہو جائے گا اور پھر کوئی اس دروازہ سے داخل نہیں ہوگا۔

      Sahl b. Sa'd (Allah be pleased with him) reported Allah's Messenger (may peace be upon him) as saying: In Paradise there is a gate which is called Rayyan through which only the observers of fast would enter on the Day on Resurrection. None else would enter along with them. It would be proclaimed: Where are the observers of fast that they should be admitted into it? -and when the last of them would enter, it would be closed and no one would enter it.
      Sahih Muslim, Jild 2, Hadith 216


    Your message has been successfully submitted and would be delivered to recipients shortly.